تاجروں نے 10لاکھ جرمانے کی سزا کو مسترد کر دیا

کراچی: کراچی کے تاجروں نے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 10 لاکھ جرمانے کی سزا کو مسترد کرتے ہوئے اسے بلیک میلنگ قرار دیا ہے۔

آل پاکستان آگنائزیشن آف اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کے صدر محمود حامد نے دیگر عہدے داروں کے ہمراہ ہفتے کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس میں کہا کہ چھوٹے تاجروں نے ایس او پیز کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے اپنے اسٹاف کو پابند کیا ہے مگر عید کی خریداری اور وقت کی کمی کی وجہ سے مارکیٹوں میں آنے والے لاکھوں لوگوں کا ہجوم ہے جس کے لیے انتظامیہ کو تاجروں سے تعاون کرنا ہو گا۔

محمود حامد کا کہنا تھا کہ معمولی نوعیت کی بات پر مارکیٹوں کو سیل کرکے بھاری جرمانہ عائد کرنا بلیک میلنگ ہے اسے ختم کیا جائے، تاجروں کو کاروبار کا موقع فراہم کرنا چاہیے، عیدالفطر میں چند روز باقی ہیں لہذا کاروباری اوقات میں اضافہ کیا جائے اور ہفتے میں تین روز کا ناغہ ختم کیا جائے۔

ان کا مزید کہناتھا کہ اتوار سے چاند رات تک بازاروں کو مسلسل کھولنے کی اجازت دی جائے، کراچی کی ڈھائی کروڑ کی آبادی کو حکومت سندھ نے عید کے تہوار کی خریداری کے لیے بہت کم وقت دیا ہے اسی لیے بازاروں میں رش ہے اور ایس او پیز پر عمل نہیں ہورہا اس کا واحد راستہ کاروبار کے وقت میں اضافہ کرنا ہے