دنیا کی واحد مسجد جسکو مکمل طور پر ایک عورت نے ڈیزائن کیا

استنبول: دنیا بھرکی خواتین تمام شعبہ زندگی میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا رہی ہیں، انہی خواتین میں ترکی سے تعلق رکھنے والی زینب فاضل اوغلو بھی ہیں جنہوں نے ترکی میں پہلی بار مسجد کو مکمل ڈیزائن کرنے کااعزاز حاصل کیا۔


ویسے تو استنبول میں تین سو سے زائد ایسی مساجد ہیں جو لوگوں کی توجہ اپنی جانب کھینچ لیتی ہیں لیکن زینب کی ڈیزائن کردہ مسجد جدید اور قدیم ، ماڈرن اور اسلامک آرٹ کو مکس کر کے بنایا گیا ایک شاہکار ہے جسے دیکھ کر لوگ حیران رہ جاتے ہیں۔

زینب کا کہنا تھا کہ مسجد میں استعمال کیے گئے رنگ ، خطاطی ، ڈیزائن یا کچھ اور اس مسجد میں لگا ایک ایک ٹکڑا اسلامی روایات سے جڑا ہوا ہے۔


اس مسجد کی خاصیت یہ بھی ہے کہ اس کی دیواریں نہیں بلکہ بڑی بڑی کھڑکیاں اس خوبصورتی سے لگائی گئی ہیں کہ دیکھنے والا دیکھتا ہی رہ جاتا ہے۔ ان کھڑکیوں کا ڈیزائن ایسا ہے جیسے قرآن کریم کے صفحات کھلے ہوں۔

اس مسجد کی ایک اور منفرد بات اس میں موجود خواتین کا حصہ ہےجوکہ دیگر مساجد کی طرح آخر میں نہیں بلکہ چھت پر بنایا گیا ہے۔

یہ مسجد 2009میں تمام عبادت گزاروں کیلیے کھول دی گئی تھی۔