کینیڈا: اسلام مخالف پوسٹ کرنے پر بھارتی شہری کو نوکری سے نکال دیا گیا

کینیڈا: اسلام مخالف پوسٹ کرنے پر کینیڈا نے بھارتی شہری کو نوکری سے فارغ کر دیا، اسلاموفوبیا کوئی نئی بیماری نہیں ہے اور کورونا وائرس کے دوران بھی کچھ شدت پسند افراد بھارت کے ساتھ ساتھ دیگر ممالک میں بھی مسلمانوں کے خلاف خوب زہر اگل رہے ہیں

گزشتہ دنوں عرب ممالک نے سوشل میڈیا پر اسلاموفوبیا پھیلانے والے کئی بھارتی شہریوں کو نوکریوں سے نکال تھاا، اب خبر آئی ہے کہ کینیڈا میں بھی ایسا واقعہ پیش آیا ہے جہاں بھارتی شہری کو اسلام مخالف پوسٹ کرنے پر نوکری سے نکال دیا گیا ہے۔

کینیڈا میں بھارتی شہری کو اسلام مخالف پوسٹ کرنے پر سکول سے نکال دیا گیااور رئیل اسٹیٹ کمپنی نے بھی اسکے ساتھ معاہدہ ختم کر دیا . روی ہڈا نامی بھارتی شخص نے سوشل میڈیا پر مسلمانوں کا مذاق اڑایا تھا۔ ٹویٹر پر ٹویٹ کئے جانے کے بعد بھارتی شہری جو ایک سکول کونسل چیئر کے عہدے پر تھا اسکے خلاف فوری کاروائی کرتے ہوئے اسے ہٹا دیا گیا ، اسکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ تحقیقات شروع کر دی ہیں اب یہ شخص ہمارے سکول میں ملازمت نہیں کر سکتا۔

ان کاکہنا تھا کہ ہم ایسے نظریات کو نہ تو قبول کرتے ہیں اور نہ ہی حمایت کرتے ہیں، کینیڈا میں اسلاموفوبیا کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ہم سبھی مذاہب کے ساتھ یکساں سلوک کرتے ہیں۔