تفضل رضوی نے شعیب اختر کو 10 کروڑ روپے ہرجانے کا نوٹس بھیج دیا

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ کے قانونی مشیر اور شعیب اختر کے درمیان قانونی جنگ شروع ہوگئی۔ تفضل رضوی نے شعیب اختر کو 10 کروڑ روپے ہرجانے کا نوٹس اور ایف آئی اے سائبر کرائم میں اندراج مقدمہ کی درخواست جمع کرا دی۔ تفضل رضوی نے نوٹس میں موقف اختیار کیا کہ شعیب اختر نے ویڈیو بیان میں جھوٹے اور بے بنیاد الزامات عائد کئے جس سے میری شہرت کو نقصان پہنچا۔ شعیب اختر 14 روز میں معافی مانگے نہیں تو ان کے خلاف قانونی کیس دائر کرو ں گا۔

لیگل نوٹس میں مزید کہا گیا کہ شعیب اختر سے وصول ہونے والی ہتک عزت کی دس کروڑ روپے کی رقم لاہور ہائیکورٹ بار کی ڈسپنسری میں جمع کرائی جائے گئی۔ ترجمان پی سی بی کے مطابق شعیب اختر نے جس طرح الفاظ کا چناؤ کیا ہے اس پر مایوسی ہوئی ہے جس پر پی سی بی بھی اس حوالے سے اپنا حق محفوظ رکھتا ہے ۔ دوسری جانب تفضل رضوی کے حق میں پاکستان بار کونسل کے وائس چیئرمین عابد ساقی نے کہا کہ شعیب اختر کو ایسا بیان نہیں دینا چاہیے تھا، تفضل رضوی ایک وکیل اور بار کونسل کے ممبر ہیں۔ بار کونسل اپنے ممبر کے خلاف مضحکہ خیز بیانات کی اجازت نہیں دے گی