ترکی میں ارتغرل غازی کا مجسمہ ہٹا دیا گیا

استنبول: ترکی میں ارتغرل غازی کا مجسمہ ہٹا دیا گیا۔

سلطنت عثمانیہ کے لیے راہ ہموار کرنے والے اور سلطنت کا قیام کرنے والے مجاہد عثمان غازی کے والد ارتغرل غازی کا مجسمہ ہٹا دیا گیا ہے۔ مجسمہ ہٹانے کی وجہ یہ بتائی گئی ہے کہ مجسمے کی شکل ارتغرل غازی سے نہیں بلکہ ڈرامے میں کردار ادا کرنے والے اداکار انجین التان سے ملتی تھی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترکی کے صوبے اردو میں یہ مجسمہ 4 جون کو نصب کیا گیا تھا، جس کے بعد شہریوں نے اس پر تنقید کی اور تصاویر سوشل میڈیا پر شیئر کیں۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ مجسمہ دیکھ کر ایسے لگتا ہے کہ وہ اصلی مجاہد کو نہیں بلکہ ان کا کرداد کرنے والے اداکار کو دیکھ رہے ہیں۔

شہریوں کی تنقید پر نوٹس لیتے ہوئۓ ضلعی انتظامیہ نے مجسمہ ہٹا دیا ہے اور مجسمہ تیار کرنے والوں کے خلاف کاروائ کا عمل شروع کر دیا ہے۔ تفتیش کے دوران 2 افسران کو معطل بھی کر دیا گيا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ارتغرل غازی کی ایک اور اداکارہ نے پاکستان آنے کی خواہش ظاہر کر دی

واضح رہے کہ ترک مجاہد پر بننے والا ڈرامہ ارتغرل غازی دنیا بھر میں مقبول ہو چکا ہے اور پاکستان میں بھی ڈرامے نے مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کبے ہیں۔ پاکستان میں ڈرامہ نشر کرنے کے بعد لاہور میں بھی ارتغرل غازی کا ایک مجسمہ نصب کر دیا گیا ہے۔ اور جس چوک میں مجسمہ لگایا گیا اس کا نام بھی ارتغرل غازی دکھ دیا گیا ہے۔