امریکی سیاہ فام سے ہمدردی کے لیے پاکستانی آرٹسٹ کا عجیب کارنامہ

کراچی: حیدر علی نے سیاہ فام امریکی جارج فلائیڈ سے ہمدردی کے لیے ایک پوری دیوار کو پینٹ کر دیا۔

امریکہ کے شہر میناپولس میں ایک امریکی سیاہ فام کو پولیس نے قتل کر دیا تھا جو کہ غیر مسلح تھا۔ اس واقعہ کے بعد امریکہ میں مظاہروں نے جنم لیا اور امریکہ کے بعد یہ مظاہرے پوری دنیا میں پھیل گئے۔ پاکستان میں بھی سوشل میڈیا صارفین نے پوری دنیا کے ساتھ بلیک لائیوز میٹر کا ٹرینڈ چلایا۔

کراچی سے تعلق رکھنے والے آرٹسٹ حیدر علی نے بھی امریکی سیاہ فام کے نا حق قتل پر احتجاج کی صورت میں ایک پوری دیواد پر پینٹنگ بنائی۔ انہوں نے یہ پینٹنگ روایتی پاکستانی شکل میں بنائی ہے جیسا کہ پاکستان کے ٹرکوں پر دیکھنے کو ملتا ہے۔

تصویر: سناء فاطمہ

پینٹنگ میں حيدر علی نے جارج فلائیڈ کی تصویر کے ساتھ ساتھ کچھ باتیں بھی لکھیں ہیں۔ حیدر علی نے دیوار پر لکھا کہ” ہم کالے ہیں تو کیا ہوا دل والے ہیں”۔ اس کے علاوہ انہوں نے لکھا کہ” گوروں کی نہ کالوں کی، دنیا ہے دل والوں کی”۔

حیدر علی کا کہنا تھا کہ پینٹنگ میں موجود کالا رنگ ہمیں اس کی اہمیت سکھاتا ہے۔ کالی رات کی وجہ سے ہی ہم تاروں کو دیکھ پاتے ہیں۔ حیدر علی کا مزید کہنا تھا کہ ان کی یہ پینٹنگ صرف جارج فلائیڈ کے لیے نہیں بلکہ دنیا کے ان تمام لوگوں کے لیے ہے جو نا انصافی اور برابری کے حقوق نہ ملنے پر لڑ رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: امریکی سیاہ فام جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث پولیس اہلکاروں کو رہا کرنے کا حکم

حیدر علی کی اس مثبت کوشش کو سوشل میڈیا پر سراہا جا رہا ہے اور صارفین ان کے اس آرٹ کی تعریف کر رہے ہیں۔