اگر میں نے تحریک انصاف کے عہدیداروں پر جنسی زیادتی کے الزام لگائے ہوتے تو لبرلز میرا ساتھ دیتے، سنتھیا رچی

اسلام آباد: امریکی بلاگر سنتھیا رچی کا کہنا ہے کہ اگر میں نے پی ٹی آئی کے کسی منسٹر پر ریپ کا الزام لگایا ہوتا تو نام نہاد لبرلز میرا ساتھ دیتے۔

کچھ روز قبل پیپلز پارٹی کے رہنماؤں پر جنسی زیادتی اور تشدد کا الزام لگانے والی امریکی بلاگر سنتھیا رچی نے لبرلز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ اگر پیپلز پارٹی کی جگہ تحریک انصاف کے لوگ ہوتے تو یہ نام نہاد لبرلز میرا ساتھ دیتے۔

ٹویٹر پر جاری پیغام میں امریکی خاتون کا کہنا تھا کہ” اگر میں نے پی ٹی آئی کے رہنماؤں پر زیادتی کے الزام یا میرے پاس ان کی ریکارڈنگ ہوتی اور تحریک انصاف کی طرف سے مجھے جنسی زیادتی کی دھمکیاں مل رہی ہوتیں تو یہ نام نہاد لبرلز میرا ساتھ دیتے، لیکن ہم پیپلز پارٹی کے رحمان ملک کی بات کر رہے ہیں تو یہ سب لوگ چپ کیوں ہے؟۔ ان کا مزید کہنا تھا کا کم از کم یہ عورتیں شفاف انصاف کا تو مطالبہ کریں”۔

پاکستان کی معروف اداکارہ وینہ ملک نے ٹویٹر پر اعلان کیا تھا کہ وہ اس جنگ میں سنتھیا کا ساتھ دیں گی۔ اپنے ٹویٹ میں اداکارہ کا کہنا تھا کہ” وہ پوچھنا یہ تھا کہ بغیر نکاح کے 4 ماہ میں بچہ پیدا کرنے والی عورت بڑی ڈرامہ باز ہے یا جس کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا؟۔ جواب پوری دیانتداری سے دیں۔وینہ ملک کا کہنا تھا کہ وہ پیپلز پارٹی کے خلاف جنگ جاری رکھیں گی اور سنتھیا کا ساتھ دیں گی۔

یہ بھی پڑھیں: رحمان ملک نے میرے ساتھ جنسی زیادتی کی اور یوسف رضا گیلانی نے جنسی تشدد کا نشانہ بنایا، امریکی خاتون سنتھیا رچی کا الزام

ایک دوسرے ٹویٹ میں وینہ ملک کا کہنا تھا کہ” کوئی عام لڑکی الزام لگائے تو جھوٹ کا گمان ہوسکتا ہے لیکن سنتھیا جیسی لڑکی جس نے انٹرنیشنل ریلیشنز، جرنلزم، سائیکالوجی میں ماسٹرز کیا ہوا ہو جسے دنیا جانتی ہو وہ ایسے ہی الزامات نہیں لگا سکتی یقیناً اس کے پاس ثبوت موجود ہیں
پیپلزپارٹی کی خاموشی بھی سنتھیا کو سچا ثابت کررہی ہے