امریکی سیاہ فام جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث پولیس اہلکاروں کو رہا کرنے کا حکم

منیا پولس: امریکی شہر منیا پولس میں سیاہ فام جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث پولیس اہلکاروں کی ضمانت منظور کر کے رہا کرنے کا حکم دے دیا گیا۔

امریکی پولیس نے سیاہ فام جارج فلائیڈ کو 25 مئی کو حراست میں لیا تھا جہاں وہ سانس نہ آنے کی وجہ سے ہلاک ہو گیا تھا، اس سارے معاملے کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد امریکہ میں احتجاج اور ہنگامے شروع ہو گئے تھے اور جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث 3 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔

لیکن آج امریکی عدالت نے جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث پولیس اہلکاروں کی ضمانت ساڑھے سات لاکھ ڈالر فی کس کے عوض منظور کر لی ہے اور انہیں رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ امریکہ کے اٹارنی جنرل کا کہنا ہے کہ اکثر امریکی سیاہ فام ملک کے قانون اور انصاف پر یقین ہی نہیں رکھتے۔

یہ بھی پڑھیں: انگریز کی پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور کو گالیاں، پاکستانی کے رویے نے دل جیت لیے

واضح رہے جارج فلائیڈ کو نقلی 20 ڈالر استعمال کرنے کے جرم میں گرفتار کیا گیا تھا اور تحقیق کے بعد پتا چلا کہ وہ 20 ڈالر نقلی نہیں تھے، تاہم اس سارے معاملے پر امریکہ میں مظاہرے اور توڑ پھوڑ جاری ہے جس کی وجہ سے امریکہ کو اربوں ڈالر کا نقصان ہو چکا ہے جبکہ احتجاج ابھی بھی جاری ہیں۔