1200کلو میٹر سائیکل چلا کر بیمار والد کو گھر پہنچانے والی لڑکی نے خدمت کی مثال قائم کر دی

ہریانہ: بھارتی ریاست ہریانہ میں ایک 15 سالہ لڑکی نے والد کی خدمت کر کے مثال قائم کر دی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق لاک ڈاؤن کی وجہ سے جیوتی کے والد بے روزگار ہو گئے تھے جس سے انکو صدمہ لگا اور وہ بیمار ہو گئے، لیکن جیوتی نے اپنے والد کو یقین دلایا کہ وہ سائیکل پر انہیں گھر لے کر جائے گی ،کورونا لاک ڈاؤن کے باعث سب کچھ بند تھا لیکن جیوتی نے اس سفر کے لیے سائیکل کے پیچھے ایک خاص قسم کا کیریئر لگوا لیا۔

تفصیلات کے مطابق ہریانہ کے شہر گڑگاؤں سے جیوتی کماری اور اس کے والد کو اپنے شہر دریھنگا جانا تھا لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے ٹرانسپورٹ بند تھی، اس با ہمت لڑکی نے بیمار باپ کو سائیکل پر سوار کیا اور 1200 کلو میٹر کا سفر7 دن میں سائیکل پر طے کیا۔

جیوتی نے بتایا کہ وہ روزانہ 100 سے 150 کلو میٹر سائیکل چلاتی تھی اور کھانے کے نام پر ایک بوتل میں پانی اور چند بسکٹ کے پیکٹ تھے۔ جب بھوک ستاتی تو تھوڑی دیر رک کر بسکٹ کھا لیتی اور بھر دوبارہ سائیکل پر بیٹھ جاتی لیکن جب تھکن زیادہ ہو جاتی تو سائیکل روک کر سڑک کنارے بیٹھ جاتی اور باپ کا حوصلہ بڑھاتی۔

لڑکی نے مزید بتایا کہ سفر کے دوران کھانا کم پڑنے کی صورت میں اس نے دو دن تک کچھ نہ کھایالیکن اپنے والد کو کھانا دیتی رہی، راستے میں کچھ لوگوں نے بھی ان کی مدد کی اور کھانا اور پانی فراہم کیا۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان کی مثال دینے پر بھارتی سکول نے استانی کو معطل کر دیا

جیوتی کے اس کارنامے کی وجہ سے دنیا بھر میں اسے سراہا جا رہا ہے اور مقامی شہر کی انتظامیہ نے بھی یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ ان کی ہر قسم کی مدد کریں گے۔