سعودی عرب میں کوڑے مارنے کی سزا کو ختم کر دیا گیا

ریاض: سعودی عرب میں اب کوڑے نہیں مارے جائیں گے۔ سعودی وزارت انصاف نے تمام عدالتوں کو حکم نامہ جاری کیا ہے جس میں انہیں سعودی عدالت عظمیٰ کے تازہ فیصلے سے آگاہ کیا گیا کہ آئندہ سے وہ کوڑے مارنے کی سزا نہیں دیں گی بلکہ انہیں قید یا جرمانہ یا پھر دونوں سزائیں دینی ہوں گی

سعودی وزارت انصاف نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ اب کوڑے لگانے کی سزا کوختم کر دیاگیا ہے جبکہ عدالتیں اب معمولی جرائم پر قید جرمانہ یا دونوں سزائیں دینے کی مجاز ہوں گی

سعودی سپریم کورٹ نے پچھلے ماہ ایک شاہی فرمان کے ذریعے کوڑوں کی سزا ختم کرنے کا اعلان کیا تھا، سعودی سپریم کورٹ کے جنرل کمیشن نے عدالتوں کےلیے ہدایت نامہ بھی جاری کیا تھا جس میں ماتحت عدالتوں کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ مختلف جرائم کے مرتکب افراد کو آئندہ کوڑے مارنے کے بجائے صرف جرمانہ عائد کرسکیں گی، قید بامشقت سنا سکیں گی، یا پھر یہ دونوں سزائیں ایک ہی وقت میں دے سکیں گی۔

یہ بھی پڑھیں: سعودی لڑکی کے پیٹ سے دو کلو بال نکال لیے گئے

اس شاہی حکم کا عمل صرف ایسے جرائم پر ہوگا جن کےلیے اسلام میں شرعی طور پر سزائیں مقرر نہیں اور قاضی کو اختیار دیا گیا ہے کہ وہ قرآن و سنت کی روشنی میں سزا کا تعین کرے۔یہ سعودی عرب میں انسانی حقوق سے متعلق کی جانے والی 70 قانونی اصلاحات میں سے ایک ہے جس کا مختلف حلقوں کی جانب سے خیرمقدم کیا جارہا ہے